بینائی کو کمزوری سے بچانے والی غذائیں

743

نظر کی کمزوری آج کے دور میں ایک عام مسئلہ بن چکی ہے اور کم عمری سے ہی چشمہ لگ جاتا ہے۔تاہم اگر آپ کوشش کریں تو اپنی آنکھوں کو قبل از وقت یا عمر کے ساتھ آنے والی کمزوری سے تحفظ دے سکتے ہیں اور چشمے لگانے سے بچ سکتے ہیں۔درحقیقت کچھ غذائیں بینائی کو تحفظ دینے میں مددگار ثابت ہوتی ہیں۔

مچھلی

آنکھوں کے قرینے کو دو اقسام کے اومیگا تھری فیٹی ایسڈز کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ وہ اپنا کام درست طریقے سے کرسکیں، یہ دونوں فیٹی ایسڈز چربی والی مچھلی میں مل جاتے ہیں، اومیگا تھری فیٹی ایسڈز آنکھوں کو کالے موتیے کے مرض سے بھی تحفظ دیتے ہیں، جبکہ اس جز کی کمی ڈرائی آئی نامی مرض کا باعث بھی بن سکتی ہے۔

شملہ مرچ

مرچوں کی اس قسم میں وٹامن سی بہت زیادہ ہوتا ہے جو کہ آنکھوں کی شریانوں کے لیے فائدہ ہے، طبی سائنس کے مطابق یہ جز موتیا کا خطرہ کم کرتا ہے، اس کے علاوہ یہ مرچیں آنکھوں کے لیے فائدہ مند وٹامن اے اور ای سے بھی بھرپور ہوتی ہیں۔

سبز پتوں والی سبزیاں

پالک، ساگ اور دیگر ایسی ہی سبز پتوں والی سبزیاں وٹامن سی اور ای سے بھرپور ہوتی ہیں، اس کے علاوہ ان میں کیروٹین لیوٹن اور zeaxanthin نامی اجزاءبھی ہوتے ہیں، اور ہاں ان سبزیوں میں وٹامن اے کی وہ قسم پائی جاتی ہے جو طویل المعیاد بنیادوں پر آنکھوں کے امراض کا خطرہ کم کرتی ہے۔


اس بارے میں جانئے :مصروف زندگی میں فٹ رہنے کے 8 طریقے

شکر قندی

نارنجی یا اورنج رنگ کے پھلوں اور سبزیوں جیسے شکرقندی، گاجر، آم اور آڑو وغیرہ بیٹا کیروٹین سے بھرپور ہوتی ہیں جو کہ وٹامن اے کی ایک قسم ہے جو بینائی کو درست رکھنے میں مدد دیتی ہے جبکہ تاریکی میں آنکھوں کو ایڈجسٹ ہونے میں بھی مدد دیتی ہے۔ ایک شکر قندی میں اتنی وٹامن سی ہوتی ہے جو کہ ایک دن کی ضروریات کا نصف ہوتی ہے جبکہ وٹامن ای بھی کچھ مقدار میں جسم کا حصہ بن جاتا ہے۔

کیلے

وٹامن اے اور بیٹا کیروٹین فراہم کرنے والے اہم ذریعہ ہونے کی وجہ سے کیلے اس اسٹرکچر کو مستحکم رکھتے ہیں جو روشنی کو آپ کے قرنیہ میں لانے کا کام کرتا ہے، اس طرح آپ کی بینائی زیادہ موثر ہوجاتی ہے۔

انڈے

انڈے میں موجود زنک جسم کو لیوٹین اور zeaxanthin کو استعمال کرنے میں مدد دیتا ہے، یہ دونوں اجزا انڈے کی زردی میں پائے جاتے ہیں جو کہ سورج کی مضر روشنی سے قرینے کو بچانے میں مدد دے سکتے ہیں، اس کے علاوہ یہ بینائی کو کنٹرول کرنے والے نظام کے تحفظ کے لیے بھی فائدہ مند ہیں۔

انگور

انگور کو کھانا بھی بینائی کے لیے اچھا ہوتا ہے اور یہ بڑھاپے میں اندھے پن کا خطرہ کم کردیتا ہے۔انگور کھانے سے آنکھوں کے قرینے میں نقصان دہ مالیکیولز کے اخراج کا خطرہ کم ہوجاتا ہے۔انگور چونکہ اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور ہوتے ہیں اسی لیے وہ ڈی این اے کو نقصان سے بچا کر صحت مند خلیات کو تحفظ دیتے ہیں اور اس کے نتیجے میں بینائی کو فائدہ ہوتا ہے۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات پر مبنی ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔


مزید جانئے  : موسم گرما میں میک اپ کرنے کے ٹوٹکے


شاید آپ یہ بھی پسند کریں
تبصرے
Loading...