رمضان کی وہ 5 عادات جو صحت کے لئے تباہ کن ہے

5,519

رمضان المبارک بہت تیزی سےاختتام کی جانب بڑھ رہا ہے، جہاں بہت سےلوگ اس ماہ سے بہت زیادہ فائدہ سمیٹتے ہیں، وہیں بہت سے افراد ایسے بھی ہیں جو غلط عادات کے باعث اپنی صحت مزید خراب کرلیتے ہیں۔اس ماہ میں کھانے پینے کی غلط عادات میں بھی اضافہ ہوجاتا ہے، جس کا جلد پر منفی اثر نظر آنے لگتا ہے لیکن ابھی بھی دیر نہیں ہوئی، اس ایک ہفتے میں اپنی غلطیوں کا اندازہ ہوجائے تو انھیں دہرانے سے بچا جاسکتا ہے۔

افطاری کے فوری بعد ورزش

اگر ورزش کرنا آپ کا پسندیدہ مشغلہ ہے تو یہ جان لیں کہ اسے افطار کے فوری بعد کرنا آپ کی صحت کے لیے بالکل ٹھیک نہیں، رمضان میں ہمارے جسم کا نظام تبدیل ہوجاتا ہے اور افطار کے فوری بعد ورزش کرنے سے ہڈیوں میں تکلیف بھی ہوسکتی ہے۔بہتر ہے کہ ورزش سحری سے قبل کیا کریں۔

افطار میں کولڈ ڈرنکس کا استعمال

پورے دن کے روزے کے بعد افطار پہلا کھانا ہوتا ہے اور اس دوران کولڈ ڈرنکس پینے سے چہرے پر جھریاں پڑ سکتی ہیں، یہی وجہ ہے کہ افطار میں پانی یا لیمو پانی کا استعمال بہترین ہے۔ کولڈ رنکس نہ صرف آپ کے چہرہ کو نقصان پہنچاتی ہے بلکہ یہ معدہ کے لئے بھی انتہائی نقصان دہ ہے۔

سحری نہ کرنا

سحری کے وقت نیند سے اٹھناانتہائی مشکل کام ہے، لیکن سب ہی جانتے ہیں کہ رمضان میں ہمارا فوڈ سائیکل کس طرح کام کرتا ہے، جب آپ سحری چھوڑتے ہیں تو 24 گھنٹوں میں ایک ہی مرتبہ صحیح انداز سے کھانا کھاتے ہیں اور یہ آپ کی صحت کے لئے ٹھیک نہیں کیوں کہ جب آپ اپنے جسم کو کھانا نہیں دیں گے تو آپ کی جلد مرجھا جائے گی۔ تو ہر حال میں سحری کو ضروری سمجھے ، بے شک وہ دودھ کا ایک گلاس یا سادی روٹی ہی کیوں نہ ہو۔

رمضان میں نمک کا زیادہ استعمال

رمضان میں کھائے جانے والے پکوان میں نمک کا بہت زیادہ استعمال کیا جاتا ہے، پھر چاہے چھولے ہوں، یا نمکین لسی، لیکن نمک کے زیادہ استعمال سے جسم میں پانی کی کمی بھی ہوسکتی ہے اور پانی کی کمی کے باعث جلد خشک ہونے لگتی ہے۔اس کے لیے کیلوں کا زیادہ سے زیادہ استعمال کریں تاکہ جسم میں سوڈیم سے زیادہ پوٹاشیئم بڑھے۔

افطاری اور سحری کے فوری بعد سونا

صرف رمضان میں ہی نہیں بلکہ کسی بھی وقت کچھ کھانے کے فوری بعد سونا صحت کے لیے نقصان دہ ہے۔رمضان میں یہ عادت اس لیے زیادہ نقصان دہ ثابت ہوسکتی ہے کیوں کہ ہمارے جسم کو کھانا بہت دیر بعد ملتا ہے۔اس عادت سے وزن میں اضافہ اور دل کی بیماریوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ تو کو شش کیجئے کے سحری اور افطاری کے کم از کم ایک گھنٹے بعد سویا جائے۔


مزید جانئے  : رمضان میں پانی کی کمی کو کیسے پورا کریں ؟

شاید آپ یہ بھی پسند کریں
تبصرے
Loading...