کھیرااور تربوز کھانے کے بعد پانی پیا جاسکتا ہے ؟

906

یہ خیال عام ہے کہ تربوز کھانے کے بعد پانی پینا ہیضے کا شکار بنا سکتا ہے جبکہ کھیرے کے اوپر پانی پینا بھی بیمار کرسکتا ہے۔مگر کیا یہ تاثر واقعی درست ہے خصوصاً گرم موسم میں جب پانی اور جوس والے پھل ڈی ہائیڈریشن سے بچانے میں مدد دیتے ہیں۔یہ دونوں جسم کو توانائی فراہم کرنے کے ساتھ تازہ دم رکھنے میں بھی مدد دیتے ہیں تو کیا واقعی پھلوں کے کھانے کے بعد پانی پینا نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے؟

اس بارے میں ایک عام تاثر تو یہ ہے کہ پھلوں کو کھانے کے فوراً بعد پانی پینا پیٹ میں درد اور دیگر مسائل کا باعث بن سکتا ہے جس کی وجہ ان پھلوں میں موجود شکر اور دیگر اجزا ءکی موجودگی ہے جو معدے کے تیزاب میں حل ہوتے ہوئے یہ مسائل پیدا کرتے ہیں۔تربوز اور کھیرے سمیت اس موسم میں دستیاب اکثر پھلوں میں پانی کی مقدار کافی زیادہ ہوتی ہے مگر یہ بھی درست ہے کہ ان کے اوپر پانی پینا کسی طرح کا نقصان نہیں پہنچاتا۔

ان پھلوں کا بیشتر حصہ خود پانی پر مشتمل ہوتا ہے تو ان کے اوپر پانی پینا کسی طرح کا نقصان نہیں پہنچاتا۔ویسے زیادہ پانی والے پھل کھانے کے بعد پانی کی خواہش کا امکان بہت کم ہوتا ہے کیونکہ ان پھلوں کا استعمال پیاس کو بجھاتا ہے۔تاہم ایسے افراد جن کا معدہ کافی حساس ہوتا ہے انہیں ضرور احتیاط کرنی چاہیے یعنی پھلوں کے اوپر پانی پینے سے گریز کرنا چاہیے۔


مٹی کے برتن میں پانی پینے کے فوائد


 

ویسے اگر بہت زیادہ تربوز کھایا جائے اور پھر بہت زیادہ مقدار میں پانی پی لیا جائے تو پھر ہاضمے کے کچھ مسائل کا سامنا بھی ہوسکتا ہے، جیسے پیٹ پھول جانا، نظام ہاضمہ سست ہوجانا یا جسم میں پانی کی مقدار بہت زیادہ بڑھنے سے الیکٹرولائٹس کا توازن بگڑ جانا وغیرہ۔

امریکا کے مایو کلینک کے مطابق پانی معدے میں موجود ایسڈ کو کم یا نظام ہاضمہ کو متاثر نہیں کرتا، درحقیقت کھانے کے دوران یا بعد میں پانی پینا ہاضمے کو بہتر کرتا ہے، پانی یا دیگر سیال جسم کے اندر کھانے کے ٹکڑے کرنے میں مدد دیتا ہے، جس سے جسم کو غذا میں موجود غذائیت جذب کرنے میں مدد ملتی ہے، اسی طرح پانی قبض سے بھی بچاتا ہے۔


ٹھنڈا پانی پینے کے آٹھ نقصانات



یہ معلومات قارئین کی دلچسپی کو مدنظر رکھتے ہوئے پیش کیا جارہا ہے ۔قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔


شاید آپ یہ بھی پسند کریں
تبصرے
Loading...