FI tag – ایچ ٹی وی اردو https://htv.com.pk/ur Tue, 08 Nov 2022 09:31:46 +0000 en-US hourly 1 https://htv.com.pk/ur/wp-content/uploads/2017/10/cropped-logo-2-32x32.png FI tag – ایچ ٹی وی اردو https://htv.com.pk/ur 32 32 مباشرت سے متعلق وہ سوالات جو خواتین پوچھنے سے کتراتی ہیں https://htv.com.pk/ur/health/sexual-health Fri, 02 Jul 2021 12:46:58 +0000 https://htv.com.pk/ur/?p=28804

مباشرت (sexual health)کے دوران زیادہ درد ہونے کی کیا وجوہات ہیں؟ چند امراض (جیسے تھائی رائیڈ کے مسائل، ذیابیطس یا ہارمونل ایشوز)کے سبب چکناہٹ کم ہونے لگتی ہے جس کی وجہ سے جماع (intercourse)میں تکلیف ہوسکتی ہے۔ بیرونی طور پر کسی چکنی چیز کا استعمال یا ہارمونل تھیراپی خشکی کو ختم کرنے میں مدد کر […]

The post مباشرت سے متعلق وہ سوالات جو خواتین پوچھنے سے کتراتی ہیں appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
مباشرت (sexual health)کے دوران زیادہ درد ہونے کی کیا وجوہات ہیں؟

چند امراض (جیسے تھائی رائیڈ کے مسائل، ذیابیطس یا ہارمونل ایشوز)کے سبب چکناہٹ کم ہونے لگتی ہے جس کی وجہ سے جماع (intercourse)میں تکلیف ہوسکتی ہے۔
بیرونی طور پر کسی چکنی چیز کا استعمال یا ہارمونل تھیراپی خشکی کو ختم کرنے میں مدد کر سکتی ہے ۔اگر مسئلہ بر قرار رہے تو کسی اچھے گائنی کولوجِسٹ سے مشورہ کریں

ویجائنہ سے خارج ہونے والے سیال میں بدبوآنا خطرے کی بات تو نہیں؟

مباشرت (sexual health) کے بعد ویجائنہ سے سیال کا اخراج تو ایک قدرتی عمل ہے البتہ اگر اس میں سے بدبو آنے لگے یا اس جگہ پر خارش یا جلن ہونے لگے تو اسکی وجہ ویجائنل انفیکشن ہو سکتی ہے ۔

انفیکشن کا سبب بیکٹیریا بھی ہو سکتا ہے اور فنگس بھی ۔ اگر بروقت علاج کرایا جائے تو اس مسئلے سے بآسانی چھٹکارا حاسل کیا جا سکتا ہے ۔

مباشرت میں دلچسپی ختم ہو جانے کی کیا وجہ ہے؟

اس عمل میں دلچسپی ختم ہونے کا باعث کوئی طبی مسئلہ بھی ہو سکتا ہے ۔ بعض اوقات ذہنی تناؤ یا معاشرتی مسائل کے باعث یہ صورتحال پیش آجاہے ۔اینٹی ڈپریسنٹ یعنی ذہنی دباؤ کم کرنے والی ادویات سے جنس میں دلچسپی کم ہو سکتی ہے ۔ اپنے شریک ِ حیات اور ڈاکٹر سے اس بارے میں کھل کر بات چیت کرنا ضروری ہے تاکہ مسئلے کی اصل وجہ سے کا تعین کرکے علاج کو ممکن بنایا جا سکے ۔ بروقت تشخیص اور درست علاج سے کھوئی دلچسپی کو واپس لایا جا سکتا ہے ۔

مردانہ کمزوری یا بعض مردوں میں خیزش کے عمل (erection) کو برقرار رکھنے کی کیا وجہ ہو سکتی ہے؟

اس کمزوری کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں ۔ ان اسباب میں طبی مسائل، نشہ آور ادویات کا استعمال اور تعلقات میں مسائل شامل ہیں ۔ اس ضمن میں پہلا قدم وجہ کا پتا لگانا اور دوسرا قدم مسئلے کا حل تلاش کرنا ہے ۔ بعض مرد اس بارے میں بات کرنے یا اس کا اقرار کرنے سے کتراتے ہیںجس سے ان میں غصہ اور اضطرابی کیفیت پیدا ہوتی جو مسئلے کو مزید بڑھا دیتی ہے ۔

سرعت انزال (ejaculation)میں مشکل کا کیا سبب ہوتا ہے؟

بعض مردوں میں جماع سے قبل سیال کا اخراج ہوتا ہے جو کہ ایک نارمل عمل ہے ۔ اس کا مقصد جماع کے لئے ضروری چکناہٹ کو پیدا کرنا ہے ۔

اسے ہیجان شہوت (orgasm) سے تشبیح دیا جا سکتا ہے ۔ رفع حاجت کی طرح اس پر بھی عمر اور تجربے کے ساتھ کنٹرول آجاتا ہے ۔ ایک تحقیق کے مطابق تین میں سے ایک مرد کو سرعت انزال میں دشواری کا سامنا ہوتا ہے لیکن وہ عمر بڑھنے کے ساتھ اس پر قابو پانا سیکھ لیتے ہیں ۔

جنسی تعلق کے نتیجے میں کس طرح کے انفیکشنز جسم میں منتقل ہو سکتے ہیں ؟

جنسی تعلق سے پھیلنے والے انفیکشنز (STI) میں گونوریا اور کلیمیڈیا شامل ہیں جن کی تشخیص اور علاج بآسانی ممکن ہے ۔ البتہ اگر لاپرواہی برتی جائے تو ان سے عورت دائمی کمر درد کا شکار ہو سکتی ہے ۔ پریگننسی میں بلیڈنگ یہاں تک کے بانجھ پن کی وجہ بھی یہ انفیکشنز ہو سکتے ہیں ۔ یاد رہے کہ ایچ آئی وی ایڈزاور ہیپاٹائٹس بی/سی بھی جنسی طور پر منتقل ہونے والے انفیکشنز ہیں ۔

انگریزی میں پڑھنے کے لئے لنک پر کلک کریں

The post مباشرت سے متعلق وہ سوالات جو خواتین پوچھنے سے کتراتی ہیں appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
جگر کی سختی کے اسبا ب اور علامات https://htv.com.pk/ur/health/cirrhosis-of-liver-causes-and-symptoms Sat, 20 Mar 2021 07:10:21 +0000 http://htv.com.pk/ur/?p=18228

جگر کی سختی یا جگر کے سکڑ جانے کو میڈیکل اصطلاح میں سیروسس آف لیور کہتے ہیں۔یہ مرض بہت آہستہ آہستہ پیدا ہوتاہے لیکن جب تک اسکی تشخیص ہوتی ہے تو یہ مرض آخری اسٹیج پر پہنچ چکا ہوتاہے۔سیروسس آف لیور کی وجہ سے ہونے والی پیچیدگیوں میں علاج کے بعد مریض کو آرام پہنچایا […]

The post جگر کی سختی کے اسبا ب اور علامات appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>

جگر کی سختی یا جگر کے سکڑ جانے کو میڈیکل اصطلاح میں سیروسس آف لیور کہتے ہیں۔یہ مرض بہت آہستہ آہستہ پیدا ہوتاہے لیکن جب تک اسکی تشخیص ہوتی ہے تو یہ مرض آخری اسٹیج پر پہنچ چکا ہوتاہے۔سیروسس آف لیور کی وجہ سے ہونے والی پیچیدگیوں میں علاج کے بعد مریض کو آرام پہنچایا جاتاہے

اسباب

۱۔جگر میں نکلنے والی صفرا کی نالی میں اگر کسی قسم کی رکاوٹ پیدا ہوجائے تو صفرا جگر میں جمع ہوتا رہتاہے۔اگر یہ کیفیت لمبے عرصے کے لئے ہوجائے تو جگرمیں سختی پیدا ہوجاتی ہے
۲۔بعض اوقات ہیپاٹائیٹس بی اورسی کے وائرس کے انفیکشن کی وجہ سے جگرمیں سختی پیدا ہوسکتی ہے۔یہ ضروری نہیں کہ انفیکشن کی صور ت میں سختی اسی وقت پیدا ہو جائے بلکہ یہ اکثر مہینوں اور سالوں کے بعد ہی پیدا ہوتی ہے۔
۳۔ڈاکٹروں کی تحقیق کے مطابق یہ بات بھی ثابت ہوئی ہے کہ کچھ خاص قسم کی اینٹی باڈیزخون میں موجود ہوتی ہیں جنکی وجہ سے جگرمیں سختی پیدا ہوسکتی ہے۔
۴۔الکحل لیور ٹاکسن ہے۔ اسکے زہریلے اثرات سب سے زیادہ جگر پر ہی اثر انداز ہوتے ہیں۔
۵۔کئی ادویات ایسی بھی ہیں جنکے مسلسل استعمال سے لیور سیروسس ہوسکتاہے۔
۶۔مسلسل مرغن غذاؤں کے استعمال سے فیٹی لیور ہوسکتاہے۔جسکی وجہ سے جگر میں چکنائیوں کی مقدار بڑھ جاتی ہے۔ جو جگر میں سوزش کا باعث بن سکتی ہے۔ جگرکی مسلسل سوزش کے باعث لیو ر کی سختی ہوسکتی ہے۔
۷۔دل کی کچھ ایسی پرانی بیماریاں جو کافی سالوں سے لاحق ہوں جگر کی سختی کا باعث بن سکتی ہیں۔
۸۔ولسن ڈیزیز میں دماغ اور جگر میں کاپر زیادہ جمع ہوجاتاہے جو جگرکی سختی کا باعث بن سکتاہے۔
۹۔ایک بیماری ایسی ہوتی ہے جسمیں جگرمیں آئرن جمع ہوناشروع ہوجاتاہے۔اسکو ہیموکرومیٹوسس کہتے ہیں۔ یہ بیماری بھی جگر کی سختی کا باعث بن سکتی ہے۔

علامات

جگر کی سختی میں دو طرح کی علامات پائی جاتی ہیں جو مندرجہ ذیل ہیں:

عمومی علامات

۱۔وزن بہت کم ہوجاتاہے اور مریض سست اور لاغر ہوجاتاہے۔
۲۔اکثر بخار رہتاہے۔ جگر کے مقام پر درد ہوتارہتاہے۔
۳۔بھوک بالکل نہیں لگتی اور مریض تھوڑا سا کام کرنے سے تھک جاتاہے۔
۴۔پہلے جگر سائز میں بڑا ہوتاہے اور پھر آہستہ آہستہ سکڑ جاتاہے۔
۵۔مریض کی تلی بھی بڑھ جاتی ہے۔

خصوصی علامات

۱۔مریض کا ہاضمہ بہت زیادہ خرا ب رہتاہے۔اکثر قبض اور کبھی کبھی بہت زیادہ گیس ہوجاتی ہے۔
۲۔پیٹ میں پانی جمع ہونا،جگرکی وریدوں میں بلند فشار خون ہونا۔
۳۔غذائی نالی کی وریدوں کا موٹا ہوجانا اور خون کی قے ہونا۔
۴۔پیٹ میں پانی بھرنے کی وجہ سے پیٹ پر نیلی نیلی وریدیں ابھر آتی ہیں۔
۵۔جلد خشک اور جسم کا رنگ زردی مائل ہوجاتاہے۔مریض کے پاؤں سوج جاتے ہیں۔اکثر جلد پر خارش رہتی ہے۔
۶۔مردوں میں مردانہ صلاحیتوں کی کمی اور خواتین میں ماہواری کی بندش ہوسکتی ہے۔
۷۔اکثر مریضوں میں خونی بواسیر اور یرقان کی علامات بھی پائی جاتی ہیں۔

احتیاطی تدابیر

جگر کی سختی کے مریضوں کو مندرجہ ذیل ہدایات پر عمل کرناچاہئے۔
۱۔مکمل آرام اور نمک کااستعمال کم کرنا چاہئے۔
۲۔مرچ مصالحے،مرغن غذائیں اور گوشت کا استعمال تو بالکل ترک کردیناچاہئے۔
۳۔تمام نشہ آور اشیاء سے مکمل پرہیز کرناچاہئے۔
۴۔کھانے میں سبزیاں ،دوسری غذائیں،تازہ پھل اور انکا جوس استعمال کرناچاہئے۔
۵۔کھلے اور ہوادار کمرے میں ٹینشن اور ڈپریشن سے بالکل دور رہیں۔
۶۔انڈہ اور مچھلی کے استعمال سے پر ہیز کریں۔
۷۔اگر کبھی خون چڑھانے کی ضرورت پڑے تو ہمیشہ محفوظ اسکرین شدہ معیاری خون لگوائیں۔
۸۔ایسی ادویات جن سے جگر پر برے اثرات مرتب ہوں ڈاکٹر کے مشورے کے بغیر لینے سے پرہیز کریں۔
۹۔ہمیشہ صاف اورجراثیم سے پاک پانی کا استعمال کرناچاہئے۔
۱۰۔ہمیشہ اپنے ڈاکٹر سے رابطہ میں رہیں،اور ڈاکٹر کی دی گئی ہدایات پر عمل کریں۔

 مزید جانئے :10عادتیں جو آپ کو بوڑھا کر رہی ہیں


The post جگر کی سختی کے اسبا ب اور علامات appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
2ہفتوں میں رانوں اور ہپ کی چربی کم کریں https://htv.com.pk/ur/fitness/lose-weight-from-thighs-and-hips-in-2-weeks Mon, 08 Mar 2021 10:44:56 +0000 http://htv.com.pk/ur/?p=19415

رانیں اور ہپ وزن کم کرنے کے لحاظ سے جسم کے سب سے مشکل حصے تصور کیئے جاتے ہیں۔ جسم کی ان جگہوں کا وزن بے حد جلدی بڑھ بھی جاتا ہے اور گھٹنے میں بہت وقت لگاتا ہے ۔ اگر آپ 2ہفتوں میں رانوں اور ہپ سے چربی کم اور جسم کو شیپ میں […]

The post 2ہفتوں میں رانوں اور ہپ کی چربی کم کریں appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>

رانیں اور ہپ وزن کم کرنے کے لحاظ سے جسم کے سب سے مشکل حصے تصور کیئے جاتے ہیں۔ جسم کی ان جگہوں کا وزن بے حد جلدی بڑھ بھی جاتا ہے اور گھٹنے میں بہت وقت لگاتا ہے ۔ اگر آپ 2ہفتوں میں رانوں اور ہپ سے چربی کم اور جسم کو شیپ میں لانا چاہتے ہیں تو یہ ٹوٹکے اپنائیں۔ ہمیں امید ہے ان نسخوں سے آپ جلد وزن کم کرنے میں کامیاب ہو جائیں گے ۔

کارڈیو

cardio

باقائدگی سے ورزش وزن کم کرنے کا سب سے بنیادی اصول ہے چند کارڈیو ورزشیں ایسی ہیں جن سے رانوں اور ہپ سے وزن جلدی کم ہوتا ہے ۔ اگر آپ کے پاس اسٹیشنری بائیک یا ٹریڈ مل ہے تو دو ہفتوں تک روزآنہ 30سے40منٹ تک ورک آؤٹ کریں ۔

ایروبک

aerobic

اس ورزش سے نہ صرف رانوں اور ہپ کا بلکہ پورے جسم کا وزن تیزی سے گھٹتا ہے اور باڈی شیپ میں آجاتی ہے ۔ سیڑھیاں چڑھنا اترنا بھی ایک طرح کی ایروبک ورزش ہے ۔ اس سے آپ کی کمر سیدھی ہوتی ہے اور ٹانگوں خصوصاً رانوں کی چربی گھلتی ہے ۔تیز چہل قدمی اور سائیکلنگ بھی ایروبک ورزش کا بہترین متبادل ہے ۔

سیب کا سرکہ

apple cider

سیب کا سرکہ جسے انگریزی میں ایپل سائڈر ونیگر بھی کہتے ہیں جسم کا فیٹ تیزی سے گھٹاتا ہے ۔ اس کے علاوہ اس میں پوٹاشیئم ، میگنیشیم اور کیلشیم بھی کثیر تعداد میں موجود ہوتا ہے ۔
*تین حصے سرکے میں ایک حصہ زیتون یا ناریل کا تیل ملائیں ۔ اس سے رانوں اور اور ہپ کا 10منٹ تک مساج کریں ۔ 30منٹ تک لگے رہنے دیں ۔ پھر پانی سے دھو دیں ۔ اس عمل کو دن میں دو با ر دو ہفتے تک دہرائیں ۔
*2چھوٹے چمچ سیب کے سرکے میں تھوڑا سا شہد ملائیں اور اسے ایک گلاس ہلکے گرم پانی میں ملا لیں ۔ اسے روزانہ نہار منہ پئیں ۔

ناریل کا تیل

cocunat-oil

ناریل کے تیل میں موجود فیٹی ایسڈ جلد میں آسانی سے جذب ہو جاتا ہے اور جسم میں موجود چربی کو انرجی میں تبدیل کر دیتا ہے ۔
*رانوں اور ہپ کا ناریل کے تیل سے روزانہ دن میں دو بار 10منٹ تک مساج کریں ۔
*کھانا پکانے میں بھی ایکسٹرا ورجن ناریل کے تیل کا استعمال کریں ۔

کافی

coffee

کافی میں موجود اینٹی آکسیڈنٹس اور کیفین جلد کو ٹائٹ کرتے ہیں ۔ اس سے جسم کی چربی کی گردش بڑھتی ہے جس سے وہ جلدی گھلتی ہے ۔
1۔ ایک چھوٹا چمچ کافی لیں۔
2۔اس میں تھوڑا شہد ملائیں اور پیسٹ کی شکل دے دیں ۔
3۔ نہانے سے پہلے اس آمیزے کو رانوں اور ہپ پر لگائیں اور سوکھنے دیں ۔
4۔ پھر ہاتھ گیلے کرکے اسکرب کی طرح مل کے اسے دھو دیں ۔
5۔ اس عمل کو ہفتے میں ہر ایک دن چھوڑ کر دہرائیں۔

مزید جانئے :10 غذائیں جھٹ پٹ وزن گھٹائیں


The post 2ہفتوں میں رانوں اور ہپ کی چربی کم کریں appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
مچھلی کے تیل کے کیپسول ؟فائدے مند یا پھر  https://htv.com.pk/ur/health/fish-oil-capsule Sat, 19 Oct 2019 10:30:11 +0000 https://htv.com.pk/ur/?p=34444

آپ نے سنا ہوگا کہ اومیگا تھری فیٹی ایسڈز ایسے صحت مند فیٹس ہیں جو دل کو صحت مند رکھنے کے لیے ضروری ہے اور تمام طبی ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ اومیگا تھری فیٹی ایسڈز کے حصول کا بہترین ذریعہ آئلی فش یعنی مچھلی کے تیل کا استعمال ہے۔مگر کیا مچھلی کے […]

The post مچھلی کے تیل کے کیپسول ؟فائدے مند یا پھر  appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>

آپ نے سنا ہوگا کہ اومیگا تھری فیٹی ایسڈز ایسے صحت مند فیٹس ہیں جو دل کو صحت مند رکھنے کے لیے ضروری ہے اور تمام طبی ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ اومیگا تھری فیٹی ایسڈز کے حصول کا بہترین ذریعہ آئلی فش یعنی مچھلی کے تیل کا استعمال ہے۔مگر کیا مچھلی کے تیل کے کیپسول روزانہ کھانا اس حوالے سے فائدہ مند ثابت ہوتے ہیں؟ویسے تو اس بارے میں اب تک ابہام ہے ۔ کچھ فوائد جانتے ہیں جو مچھلی کے تیل کے کیپسول سے پہنچتے ہیں ، جانئے

جسمانی دفاعی نظام کی مضبوطی کے لئے

متعدد ممالک میں پولی ان سچورٹیڈ ایسڈز مختلف غذاؤں جیسے مکھن یا مارجرین میں شامل کیے جاتے ہیں، یہ وہ جز ہے جو مچھلی کے تیل میں موجود اومیگا تھری فیٹی ایسڈز میں بھی ہوتا ہے جو کہ جسمانی دفاعی نظام کو مضبوط بناتا ہے جبکہ جسم کو انفیکشن سے لڑنے میں مدد دیتا ہے۔

ہڈیوں کے لیے مفید

میری لینڈ یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق اومیگا تھری فیٹی ایسڈز صحت مند ہڈیوں کو برقرار رکھنے میں مدد دیتے ہیں، طبی رپورٹس کے مطابق یہ فیٹی ایسڈز جسم میں کیلشیئم کے جذب ہونے کی مقدار کو بڑھاتے ہیں جبکہ پیشاب کے ذریعے ان کے اخراج کو کم کرتے ہیں، جس سے ہڈیوں کی مضبوطی اور نشوونما کو فروغ ملتا ہے۔

ذہنی امراض کے لئے مفید

مچھلی کے تیل کا اہم جز اومیگا تھری فیٹی ایسڈز صحت مند دماغی افعال کے لیے اہم ہوتے ہیں اور طبی رپورٹس کے مطابق یہ فیٹی ایسڈز ڈپریشن کے شکار افراد پر مثبت اثرات مرتب کرتے ہیں


اس بارے میں جانئے : دماغی صحت پر اثر انداز ہونے والی 10 عادات

دل کو تحفظ فراہم کرتا ہے

کچھ طبی رپورٹس کے مطابق اومیگا تھری فیٹی ایسڈز جو مچھلی کے تیل میں پائے جاتے ہیں، امراض قلب کے متعدد خطرات کو کم کرتے ہیں، یہ تیل خون میں موجود فیٹس کی سطح کو کم کرتا ہے جبکہ خون کو جمنے یا لوتھڑے بننے سے روکنے میں بھی مدد دیتا ہے۔ رپورٹس میں یہ بھی بتایا گیا کہ فیٹی تھری ایسڈز سے بھرپور غذا کا استعمال فالج سے بھی تحفظ دے سکتا ہے خاص طور پر یہ کیپسول ان افراد کے لیے فائدہ مند ہیں جنھیں حال ہی میں ہارٹ اٹیک یا فالج کا سامنا ہوا ہو۔

کولیسٹرول کی سطح میں کمی کے لئے

مایو کلینک نے مچھلی اور اومیگا تھری فیٹیس ایسڈز کو کولیسٹرول میں کمی لانے کے لیے بہترین قرار دیا ہے اور یہ جز مچھلی کے تیل کا مرکزی جز ہے، اومیگا تھری فیٹی ایسڈز خون میں ٹرائی گلیسڈر کی سطح میں کمی لاتا ہے جو جسم کے لیے فائدہ مند کولیسٹرول کی سطح بڑھاتا ہے۔ ہفتے میں دو یا تین دفعہ ان کا استعمال کولیسٹرول پر مثبت اثرات مرتب کرتا ہے۔

اسٹینما مضبوط بنانے کے لئے

ایک تحقیق کے مطابق مچھلی کے تیل کا استعمال معمول بنانے پر جسم چربی کو جسمانی سرگرمیوں کے درمیان استعمال کرنا شروع کردیتا ہے، جس سے ورزش یا جسمانی سرگرمیوں کے لیے جسمانی اسٹینما بڑھتا ہے۔

بالوں کو صحت مند بنائیں

مچھلی کے تیل میں موجود وٹامن اے اور ڈی کمزور بالوں کے مسئلے سے نجات دلاتا ہے جبکہ کیلشیئم اور فاسفورس جذب کرنے میں مدد دیتا ہے۔

بینائی کے لیےمفید

اس تیل میں موجود فیٹی ایسڈز سیال کے اخراج میں مدد دیتا ہے جس سے آنکھ کے نچلے حصے پر دباؤ کم ہوتا ہے، اس کا استعمال بینائی کے مختلف مسائل سے بچانے میں کسی حد تک مدد دے سکتا ہے۔

(نوٹ : یہ آرٹیکل معلومات کی فراہمی کے لئے ہے۔ کیپسول کے استعمال سے پہلے ڈاکٹر سے ضرور مشورہ لیں۔)


ان طریقوں سے بلڈپریشر میں کمی لانا اب ممکن ہے


The post مچھلی کے تیل کے کیپسول ؟فائدے مند یا پھر  appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
خوراک کے عالمی دن پر اپنے آپ سے وعدہ کیجئے https://htv.com.pk/ur/news/international-food-day-htv Wed, 16 Oct 2019 11:05:32 +0000 https://htv.com.pk/ur/?p=34479

دنیا بھر میں روزانہ کی بنیا د پر کھانا ضائع ہوتا ہے اور دنیا بھر میں بے شمار لوگ ایسے ہیں جنھیں دو وقت کی روٹی نصیب نہیں ہوتی اور وہ اکثر بھوکے سوجاتے ہیں ۔بے شمار لوگ کئی کئی روز فاقوں سے گزرتے ہیں۔گھر میں کھانے سے لے کر ہوٹل جاکر کھانا کھانے تک […]

The post خوراک کے عالمی دن پر اپنے آپ سے وعدہ کیجئے appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>

دنیا بھر میں روزانہ کی بنیا د پر کھانا ضائع ہوتا ہے اور دنیا بھر میں بے شمار لوگ ایسے ہیں جنھیں دو وقت کی روٹی نصیب نہیں ہوتی اور وہ اکثر بھوکے سوجاتے ہیں ۔بے شمار لوگ کئی کئی روز فاقوں سے گزرتے ہیں۔گھر میں کھانے سے لے کر ہوٹل جاکر کھانا کھانے تک ہم لوگ بےشمار کھانا ضائع کرتے ہیں جو کسی کا پیٹ بھرنے کے بجائے کچرے کا حصہ بن جاتے ہیں۔ پاکستان سمیت دنیا بھر میں 16 اکتوبر کو خوراک کا عالمی دن منایا جاتا ہے اس دن کو منانے کا مقصد لوگوں میں خوراک کو محفوظ بنانے سے متعلق آگاہی دینا اورشعور پیدا کرنا ہے۔اور اس روزہم سب کو اپنے آپ سے وعدہ کرنا ہوگا کہ ہم کھانے کو ضائع ہونے سے بچائیں گے۔

مندرجہ ذیل طریقے سے ہم کھانے کو ضائع ہونے سے بچاسکتے ہیں۔

بچ جانے والے کھانے کا دوبارہ استعمال :

اگر آپ کے گھر میں لنچ یا ڈنرمیں کھانا بچنا معمول ہےتو اس کا سب سے آسان حل یہ ہے کہ اس کو پھینکنے کے بجائے اس کو جما دیں، تو اس کھانے کو آپ کسی اور دن استعمال کرسکتے ہیں یا پھر کسی ضرورت مند کو دے بھی سکتے ہیں۔ اس طرح کھانا ضائع نہیں ہوگا بلکہ کسی کا پیٹ بھرنے کے کام آجائے گا۔

ضرورت ہو تو کھانے کی اشیاء خریدئیے:

اگر گھر میں پہلے سے کھانے کا سامان موجود ہے تو مزید خریدنا عقل مندی نہیں۔ درحقیقت انسان بھوک میں وہ سب خرید لیتا ہے جو اس کو استعمال نہیں کرنا ہوتا اور یہی وجہ ہے کہ پھر وہ کھانا ضائع ہوجاتا ہے۔ استعمال کے مطابق کھانا کی اشیاء خریدیں۔

بچے ہوئے کھانے کو جمادیں:

کھانا بچ جانے کے بعد اسے پھیکنے یا ضائع کرنے کے بجائے جمادیں تاکہ وہ بعد میں کام آسکے، یا اس کھانے کو کسی اور کو دیدیں تاکہ آپ کے ذریعے سے کسی کا پیٹ بھر سکے۔بچا ہوا کھانا، چاول، مرغی یا گوشت جیسی چیزیں باآسانی جمائی جاسکتی ہیں اور ان کا بعد میں استعمال بھی کیا جاسکتا ہے۔

منجمد کھانا یا ڈبہ بند کھانا خریدیں:

اکثر لوگوں کا خیال ہے کہ ڈبے کا کھانا اور فروزن فوڈ صحت کے لیے مفید نہیں ہوتا اور اس میں وٹامنز موجود نہیں ہوتے درحقیقت اس بات میں کوئی صداقت نہیں، یہ کھانا اتنا ہی فائدہ مند اور مفید ہوتا ہے جتنا کہ باقی پکوان اس کی وجہ یہ ہے کہ یہ کھانا بننے کے فوری بعد جما دیا جاتا ہے جس کی وجہ سے اس میں شامل وٹامنز محفوظ رہتے ہیں۔ اس کھانے کا فائدہ یہ ہے کہ جتنی ضرورت ہوگی اتنا ہی الگ کرکے استعمال کیا جاسکتا ہے۔

بچ جانے والے کھانے کے استعمال کی ترکیب ڈھونڈئیے:

اپنے بچے ہوئے کھانے کو استعمال کرنے کے لیے کھانے کی آن لائن ترکیب ڈھونڈے جس سے آپ کا کھانا ضائع نہ ہو اور اپنے بچے ہوئے کھانے کو باآسانی اور ایک نئے طریقے سے بخوبی بنایا جاسکے۔

سبزی اور پھل کو کیسے محفوظ کریں:

کون سی سبزی اور پھل فریج میں رکھنا چاہیے اور کون سی فریج سے باہر اس بات کا بخوبی اندازہ ہونا چاہیے۔ کیا آپ جانتے ہیں پیاز، لہسن اور آلو کے علاوہ باقی سبزیوں کو فریج میں رکھنا چاہیے البتہ پھلوں میں کیلے کو فریج سے باہر اور باقی پھلوں سے دور رکھنا چاہیے کیوں کہ یہ باقی پھلوں کو خراب کردیتا ہے۔


میٹابولزم کوتیز کرنے کے پانچ آسان طریقے


The post خوراک کے عالمی دن پر اپنے آپ سے وعدہ کیجئے appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>