پریگننسی – ایچ ٹی وی اردو https://htv.com.pk/ur Tue, 29 Mar 2022 05:50:03 +0000 en-US hourly 1 https://htv.com.pk/ur/wp-content/uploads/2017/10/cropped-logo-2-32x32.png پریگننسی – ایچ ٹی وی اردو https://htv.com.pk/ur 32 32 اگر آپ چاہتی ہیں کہ آپ کا بچہ ذہین ہو تو دوران حمل یہ 7غذائیں استعمال کریں https://htv.com.pk/ur/pregnancy/eat-foods-for-intelligent-child Mon, 04 Nov 2019 07:16:41 +0000 https://htv.com.pk/ur/?p=34600 pregnant mother

تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ دوران حمل زیادہ چکنائی والی چیزیں کھانے سے آپ کے بچے کا ذہن صحت مند رہتا ہے۔ اگر آپ حاملہ ہیں اور چاہتی ہیں کے آپ کا بچہ ذہین ہو تو آپ کو صحیح غذا لینی ہوگی۔یہ بات مذاق نہیں،دوران حمل صحیح غذا کا استعمال بچے کے دماغ کو […]

The post اگر آپ چاہتی ہیں کہ آپ کا بچہ ذہین ہو تو دوران حمل یہ 7غذائیں استعمال کریں appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
pregnant mother

تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ دوران حمل زیادہ چکنائی والی چیزیں کھانے سے آپ کے بچے کا ذہن صحت مند رہتا ہے۔
اگر آپ حاملہ ہیں اور چاہتی ہیں کے آپ کا بچہ ذہین ہو تو آپ کو صحیح غذا لینی ہوگی۔یہ بات مذاق نہیں،دوران حمل صحیح غذا کا استعمال بچے کے دماغ کو طاقت ور بناتا ہے۔جدید تحقیق کے مطابق یہ غذائیں نہ صرف بچے کا حافظہ تیز کرتی ہیں بلکہ ذہنی مسائل جیسے الزائمرکی بیماری سے بھی محفوظ رکھتی ہیں

زیادہ چکنائی والی غذا آپ کے ہونے والے بچے کو الزائمر کی بیماری سے محفوظ رکھتی ہے:

ایک نئی تحقیق کے مطابق فیٹس والی غذاجیسے سالمن،میوے،پنیر اور اواکاڈوکے دوران حمل استعمال سے بچے کے ذہن میں ہونے والی ایسی تبدیلیوں سے حفاظت رہتی ہے جو مستقبل میں الزائمر کی بیماریوں کا باعث بن سکتی ہیں ۔ماضی میں کی گئی تحقیق کے مطابق جن لوگوں کی مائوں کو الزائمر کی بیماری ہوتی ہے ان کی فیملی میں اس بیماری کے ہونے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں ۔اس معاملے میں غذا اہم کردار ادا کرتی ہے اور اس بیماری سے بچا سکتی ہے۔

ذہین بچے کی پیدائش کے لئے زمانہ حمل میں لینے والی غذائیں:

ایک بچے کو نئی چیزیں سیکھنے اور آگے بڑھنے کے لئے بہت محنت کرنا پڑتی ہے۔جس کے لئے اسے بہت زیادہ توانائی کی ضرورت ہوتی ہے۔اپنے بچے کو مستقبل میں ذہین اور توانا رکھنے کے لئے دوران حمل یہ غذائیں کھائیں۔

چکنائی والی مچھلی:

سالمن اور میکریل مچھلی میں اومیگا تھری فیٹی ایسڈ وافر مقدر میں ہوتا ہے۔جو بچے کی ذہنی نشونماء کے لئے بہت ضروری ہوتا ہے۔ہفتے میں دو یا اس سے زیادہ مرتبہ چکنائی والی مچھلی ضرور کھائیں۔

پتوں والی سبزیاں:

ہری سبزیوں جیسے پالک اور دالوں میں فولک ایسڈ ہوتا ہے۔یہ غذائی اجزاء بچے کے ذہن کو کسی طرح کا نقصان پہنچنے سے بچاتے ہیں ۔اس کے علاوہ فولک ایسڈ بچے کو ذہنی اور قلبی پیچیدگیوں سے بچاتا ہے۔


حمل ٹھہرنے کی علامات یہ ہیں


بلیو بیریز:

بلیو بیریز میں اینٹی اوکسی ڈنٹس ہوتے ہیں جن کی بناء پر بلیو بیریز بچے میں محسوس کرنے کی صلاحیت کو بڑھاتی ہیں ۔یہ پھل الزائمر اور دل کی بیماریوں سے بچے کی حفاظت کرتا ہے۔اگر آپ بلیو بیریز نہیں کھانا چاہتیں تو اس کے بدلے ٹماٹر،رس بیری،بلیک بیری اور پھلیاں لے سکتے ہیں ۔

انڈے :

انڈوں میں امائنو ایسڈ کی ایک قسم کولین ہوتی ہے۔یہ بچے کی ذہنی صلاحیت اور یادداشت کو بڑھاتی ہے۔انڈوں میں پروٹین کی مقدار زیادہ اور کم کیلو ریز ہوتی ہیں ۔

بادام:

بادام میں اومیگا تھری فیٹی ایسڈ موجود ہیں جو ذہنی نشو نماء کو تیز کرتے ہیں ۔اگر آپ چاہتی ہیں کہ آپ کا ہونے والا بچہ ذہین ہو تو اپنی غذا میں مٹھی بھر بادام بھی شامل کرلیں ۔اس کے علاوہ بادام میں دوسرے اہم غذائی اجزاء جیسے میگنیشیئم،فیٹس،پروٹین اور وٹامن Eبھی شامل ہیں ۔اگر آپ بچے کی ذہنی صلاحیت کو بڑھانا چاہتی ہیں تو اس کے لئے دوران حمل مونگ پھلی بھی کھا سکتی ہیں ۔اس کے علاوہ اخروٹ میں بھی اومیگا تھری فیٹی ایسڈ ہوتے ہیں اس لئے انھیں بھی حاملہ خواتین اپنی غذا میں شامل کرسکتی ہیں ۔

گریک یوگرٹ:

ماں کے پیٹ میں بچے کی ذہنی نشونماء کے لئے ،نروز سیلز کا صحت مند ہونا ضروری ہے۔اس کے لئے ضروری ہے کے دوران حمل اپنی غذامیں پروٹین والی غذائیں ضرور شامل کی جائے۔گریک یوگرٹ پروٹین حاصل کرنے کا بہترین ذریعہ ہے۔یہ بچوں کی ہڈیوں کی نشونماء کے لئے بھی اچھی ہے۔ساتھ ہی گریک یوگرٹ میں آیوڈین بھی موجود ہے۔جس کی وجہ سے بچے کا وزن کم ہونے کے امکانات کم ہو جاتے ہیں ۔

پنیر:

پنیر وٹامنD حاصل کرنے کا بہترین ذریعہ ہے۔وٹامن Dبچے کی ذہنی نشونماء کے لئے بہت ضروری ہے۔حاملہ خواتین میںوٹامن Dکی کمی کی وجہ سے پیداہونے والے بچے کاIQلیول کم ہوتا ہے۔اگر آپ چاہتی ہیں کہ آپ کے بچے کا IQلیول اچھا ہو تواپنے اندر وٹامن Dکی کمی نہ ہونے دیں۔اس کے علاوہ وٹامن Dحاصل کرنے کے لئے صبح کے وقت دھوپ میں بھی بیٹھیں۔


یہ جانئے : کس طرح حمل ٹہرایا جائے ؟ اویولیشن اور فرٹائلیٹی حمل ٹہرانے میں کس طرح مددگار ہیں 


The post اگر آپ چاہتی ہیں کہ آپ کا بچہ ذہین ہو تو دوران حمل یہ 7غذائیں استعمال کریں appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
4غذائی اجزاء جو سیکس کی زندگی کو جلاء بخش سکتے ہیں  https://htv.com.pk/ur/pregnancy/sex-life-foods Tue, 29 Oct 2019 06:43:54 +0000 https://htv.com.pk/ur/?p=34565

آجکل کے لوگوں کا طرز زندگی ذرا سست ہوتاجارہا ہے جس کی وجہ سے وہ ذہنی دبائو اور دوسری بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں ۔اس کا اثر آپ کی سیکس کی زندگی پر بھی پڑتاہے۔ کیا آپ جانتے ہیں کہ چاکلیٹ کا استعمال آپ کے جنسی تعلق کو بہتر بناسکتا ہے کیونکہ اس میں […]

The post 4غذائی اجزاء جو سیکس کی زندگی کو جلاء بخش سکتے ہیں  appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
آجکل کے لوگوں کا طرز زندگی ذرا سست ہوتاجارہا ہے جس کی وجہ سے وہ ذہنی دبائو اور دوسری بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں ۔اس کا اثر آپ کی سیکس کی زندگی پر بھی پڑتاہے۔ کیا آپ جانتے ہیں کہ چاکلیٹ کا استعمال آپ کے جنسی تعلق کو بہتر بناسکتا ہے کیونکہ اس میں موجود اجزاء آپ کے جسم پر اچھے اثرات ڈالتے ہیں اور آپ کا موڈ اچھا بناتے ہیں ۔تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ کیفین بھی جنسی تعلق کو بہتر بنانے میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔اور عورت کی جنسی قوت کو بڑھاتی ہے۔یہاں ہم چند غذائی اجزاء کا ذکر کر رہے ہیں جو آپ کے جنسی تعلق کو زیادہ خوشگوار بنا سکتے ہیں

بیٹا کیروٹین

مختلف تحقیقات سے ثابت ہوا ہے کہ بیٹا کیروٹین سے بھر پور غذائیں اسپرم کے فیمیل ایگ تک بڑھنے کی صلاحیت کو 8%تک بڑھا دیتی ہے اور اس طرح یہ اسپرم ضائع نہیں ہوتے۔گاجر اور پالک میں بیٹا کیروٹین موجود ہوتا ہے لہٰذا اس سے جنسی قوت میں بھرپور اضافہ ہوتا ہے۔

وٹامن C

اگر آپ ذہنی دبائو کا شکار ہیں جو آپ کی جنسی زندگی پر اثر انداز ہورہا ہے تو آپ کو ایسی غذائوں کی ضرورت ہے جو وٹامن Cسے بھرپور ہوں ۔ذہنی دبائو کو کم کرنے اور اپنے بستر پر اچھا وقت گزارنے کے لئے وٹامنCسے بھرپور کینو اور آملے کا استعمال کریں۔

زنک

اگر آپ کی غذا میں زنک کی کمی ہوتی ہے تو جسم میں اسپرم بھی کم بنتے ہیں ۔زنک والی غذائیں جسم میں ٹیسٹرون لیول کو بڑھاکر سیکس میں اضافہ کرتی ہیں ۔لہٰذاایسی غذاکھائیں جس میں زنک وافر مقدار میں موجود ہواس کے لئے آپ تل،دالوں اورکاجو کا استعمال کریں۔

وٹامن E 

جسم میں ہارمونز کی تعداد کو بڑھانے کے لئے وٹامنEوالی غذائوں کا استعمال کریں ہارمونز میں اضافہ جنسی قوت کو بڑھاتا ہے۔وٹامن Eحاصل کرنے کے لئے پالک اور بادام کو اپنی غذا میں شامل کریں۔


صحت مند جنسی زندگی گزارنے کے بنیادی اصول


دوران حمل پیدا ہونے والے 6 مسائل جو خطرہ کی علامت ہیں


The post 4غذائی اجزاء جو سیکس کی زندگی کو جلاء بخش سکتے ہیں  appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
دوران حمل ظاہر ہونے والے چندمسائل  https://htv.com.pk/ur/pregnancy/pregnancy-problems Wed, 23 Oct 2019 06:31:44 +0000 https://htv.com.pk/ur/?p=34520 pregnancy

حاملہ خواتین کودوران حمل بہت سے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔پورے 9 ماہ تک کسی نہ کسی تکلیف سے دو چار رہتی ہیں ۔ضروری نہیں کہ ایسا ہر عورت کے ساتھ ہو لیکن اگر آپ حاملہ ہیں تو آپ کے لئے یہ جاننا ضروری ہے کہ دوران حمل آپ کو کیا مسائل درپیش […]

The post دوران حمل ظاہر ہونے والے چندمسائل  appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
pregnancy

حاملہ خواتین کودوران حمل بہت سے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔پورے 9 ماہ تک کسی نہ کسی تکلیف سے دو چار رہتی ہیں ۔ضروری نہیں کہ ایسا ہر عورت کے ساتھ ہو لیکن اگر آپ حاملہ ہیں تو آپ کے لئے یہ جاننا ضروری ہے کہ دوران حمل آپ کو کیا مسائل درپیش آسکتے ہیں۔
حمل کی عام علامات میں ہر وقت تھکن محسوس ہونا،صبح کے وقت سستی طاری ہونا اور بھوک زیادہ لگنا شامل ہیں۔لیکن ان کے علاوہ بھی بہت سی علامات ہیں جو حمل کی وجہ سے جسم میںظاہر ہوتی ہیں اور آپ کے لئے ان سے نمٹنا ضروری ہوتا ہے۔اگر آپ کے جسم میں بھی ایسی علامات ظاہر ہوں تو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ۔ہر خاتون کا اپنا مزاج ہوتا ہے اس وجہ سے ان کی علامات بھی ایک دوسرے سے مختلف ہو سکتی ہیں ۔ضروری نہیں کہ جو آپ کے ساتھ ہو وہ کسی دوسرے کے ساتھ بھی ہوگا

یہاں ہم ایسی ہی علامات کا ذکر کر رہے ہیں جو دوران حمل آپ کے جسم میں بھی ظاہر ہوسکتی ہیں ۔

پیلوس (پیڑو) میں شدید درد اٹھنا

بعض اوقات آپ کو پیلوس میں درد اٹھ سکتا ہے ۔یہ درد اتنا شدید ہوتا ہے کہ آپ کے لئے سیدھا کھڑا ہونا بھی دشوار ہو جاتا ہے۔عام طور پر یہ درد حمل کے آخری دنوں میں ہوتا ہے۔یہ درداس وقت ہوتا ہے جب بچے کے وزن کی وجہ سے نیچے کی جانب زور پڑتا ہے۔لیکن اس میں پریشان ہونے یا ڈاکٹر کے پاس جانے کی ضرورت نہیں ۔

پیشاب نہ روک پانا

عام طور پر حاملہ خواتین کو یہ مسئلہ درپیش ہوتا ہے۔بعض اوقات ہنستے ہوئے یہاں تک کہ چلتے ہوئے بھی پیشاب روکنا مشکل ہوجاتا ہے۔اس کی وجہ یہ ہے کہ بچہ دانی میں موجود بچے کا پورا زور بلیڈر پر پڑ رہا ہوتا ہے ۔یہ بالکل نارمل بات ہے جس میں فکر مندہونے کی ضرورت نہیں ۔لیکن پیلوک فلور یا کیگل ایکسرسائز کے ذریعے ان مسلز کو مضبوط بنانے میں مدد ملے گی اس طرح یہ مسئلہ آسانی سے حل ہو سکتا ہے۔

ویجائنل ڈسچارج 

کچھ خواتین کو حمل کے آغازمیں اورپھر آخری دنوں میں بھی بہت زیادہ ڈسچارج کی شکایت ہوتی ہے ۔اس کی وجہ جسم میں ہارمونز کی تبدیلی ہوتی ہے۔جب آپ حاملہ ہوتی ہیں تو آپ کے جسم میں ہارمونز منتشر ہونے لگتے ہیں اس کی وجہ سے سروکس اور ویجائنہ میں انفیکشن کا خطرہ پیدا ہو جاتا ہے ۔یہ ڈسچارج جسم کو انفیکشن سے بچانے کے لئے ہوتا ہے۔

ریاح خارج ہونا 

اکثر حاملہ خواتین کو اس کی وجہ سے شرمندگی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔دوران حمل آپ کا جسم ریلیکسن اور پروگیسٹرون ہارمونز خارج کرتا ہے یہ ہارمونز معدے کے مسلز کو سکون بخشتے ہیں جس سے ہاضمے کا عمل سست ہوجاتا ہے اور پیٹ میں گیس بننے لگتی ہے ۔ہلکی ورزش اور واک سے آپ کو اس مسئلے سے نجات مل سکتی ہے۔

بے خوابی

حمل کی علامتوں میں سے ایک علامت بے خوابی بھی ہو سکتی ہے ۔اکثر حاملہ خواتین کو رات بھر نیند نہیں آتی اس کی وجہ بھی ہارمونز میں تبدیلی ہوتی ہے اوریہ مسئلہ بھی ڈلیوری کے بعد ختم ہو جاتا ہے۔لیکن دوران حمل نیند کے لئے سکون بخشنے والی ورزش کریں اور گہری سانسیں لیں ۔سونے سے پہلے گرم پانی سے غسل اور میڈیٹیشن (مراقبہ) سے بھی اچھی نیند آنے میں مدد ملے گی ۔

جسم میں خارش ہونا

دوران حمل جسم میں خارش کبھی بہت تکلیف دہ ثابت ہوتی ہے ۔یہ خارش بہت شدید ہوتی ہے جس کے نتیجے میں جسم پر خراشیں پڑ جاتی ہیں ،کبھی اس میں درد بھی ہوتا ہے اور کبھی یہ تکلیف ڈلیوری کے بعد تک رہتی ہے پھر آہستہ آہستہ یہ ختم ہو جاتی ہے۔اس کے لئے آپ اپنے ڈاکٹر سے کوئی مرہم لکھوا سکتی ہیں ۔اس کے علاوہ خارش کی جگہ پر کھانے کا سوڈا اور ناریل کا تیل ملا کر بھی لگا سکتی ہیں ۔اس سے بھی وقتی طور پر آرام آجائے گا ۔

 

مزید جانئے 


حمل ٹھہرنے کی علامات یہ ہیں


کس طرح حمل ٹہرایا جائے ؟ اویولیشن اور فرٹائلیٹی حمل ٹہرانے میں کس طرح مددگار ہیں ،جانئے


پریگننسی کے بعد پہلے پیریڈز کیا عام پیریڈز سے مختلف ہوتے ہیں؟


تولیدی نظام سے متعلق ان باتوں کا جاننا نہایت ضروری


The post دوران حمل ظاہر ہونے والے چندمسائل  appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
کیا آپ جانتے ہیں کہ حاملہ خواتین کو زیادہ چاکلیٹ کی کیوں ضرورت ہوتی ہے؟ https://htv.com.pk/ur/pregnancy/pregnant-need-chocolate Tue, 22 Oct 2019 07:28:42 +0000 https://htv.com.pk/ur/?p=34505

دوران حمل بار بار بھوک لگنا اور مزے مزے کی چیزیں کھانے کا دل چاہنا عام بات ہے ۔اس کے لئے کوئی وقت مقرر نہیں ہوتا یہ بھوک دن یا رات کے کسی بھی حصے میں لگ سکتی ہے۔اور ایسے میں کھانا غلط بھی نہیں کیونکہ یہ صرف آپ کی ہی نہیں بلکہ آپ کے […]

The post کیا آپ جانتے ہیں کہ حاملہ خواتین کو زیادہ چاکلیٹ کی کیوں ضرورت ہوتی ہے؟ appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>

دوران حمل بار بار بھوک لگنا اور مزے مزے کی چیزیں کھانے کا دل چاہنا عام بات ہے ۔اس کے لئے کوئی وقت مقرر نہیں ہوتا یہ بھوک دن یا رات کے کسی بھی حصے میں لگ سکتی ہے۔اور ایسے میں کھانا غلط بھی نہیں کیونکہ یہ صرف آپ کی ہی نہیں بلکہ آپ کے ہونے والے بچے کی بھی ضرورت ہے۔بہت سی حاملہ خواتین چاکلیٹ کھانابھی پسند کرتی ہیں ،اگر آپ بھی ان خواتین میں شامل ہیں اوریہ سمجھتی ہیں کہ زیادہ چاکلیٹ آپ کے لئے نقصان دہ ہو سکتی ہے تو ایسا ہرگز نہیں ہے۔تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ چاکلیٹ کی طلب آپ اور آپ کے بچے کی صحت کے لئے مفید ہے۔

دوران حمل چاکلیٹ کا استعمال :

تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ چاکلیٹ کا استعمال ماں اور بچے دونوں کی صحت کے لئے مفید ہے ،یہی نہیں بلکہ اور بھی کئی وجوہات ہیں جن کی بناء پر آپ حمل میںبغیر کسی ہچکچاہٹ کے زیادہ چاکلیٹ کھا سکتی ہیں ۔

خوش اور توانا بچہ :

تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ جو خواتین دوران حمل زیادہ چاکلیٹ کھاتی ہیں ان کا بچہ پیدائش کے بعد خوش اور توانا رہتا ہے۔


حمل ٹھہرنے کی علامات یہ ہیں


پریشانی پر قابو پانے میں مدد ملتی ہے:

دوران حمل جسم میں ہارمونز کی پیداور موڈ پر اثر انداز ہوتی ہے اورخواتین کو مختلف پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔چاکلیٹ کا استعمال اسٹریس کو کم کرتاہے ۔ماہرین کا کہنا ہے ڈارک چاکلیٹ کا استعمال جسم میں اسٹریس کے لیول کو کم کرتا ہے۔

حمل گرنے کے امکانات کو کم کرتا ہے:

حمل ضائع ہونے سے بچانے کا صرف یہی ایک طریقہ نہیںبلکہ اس کے ساتھ اور بھی بہت سی احتیاطیں ہوتی ہیں۔لیکن تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ چاکلیٹ کھانے والی حاملہ خواتین میںابتدائی 3 ماہ میںحمل ضائع ہونے کے امکانات 20% تک کم ہو جاتے ہیں ۔

وزن کو مناسب رکھتا ہے:

چاکلیٹ کا استعمال زائد کیلوریز حاصل کرنے سے بچاتا ہے۔ڈارک چاکلیٹ کا استعمال وزن میں صحت بخش اضافہ کرتا ہے اور جسم میںکولیسٹرول کو کم کرتا ہے۔

وقت سے پہلے پیدائش کے امکانات کو کم کرتا ہے :

حالیہ تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ چاکلیٹ کا روزانہ استعمال پری کلیمپسیا(ہائی بلڈ پریشر)کے خطرات کو کم کرتا ہے جو وقت سے پہلے پیدائش،خون جم جانے حتیٰ کہ موت کا بھی باعث بن سکتا ہے ۔چاکلیٹ کا روزانہ استعمال پری کلیمپسیاء کا خطرہ 50% تک کم کرتا ہے۔

بچے کی اچھی نشونماء ہوتی ہے:

جو خواتین دوران حمل روزانہ چاکلیٹ کھاتی ہیں ان کے بچے کی اچھی نشونماء ہوتی ہے اور صحت مند بچہ پیدا ہوتا ہے۔

(یہ معلومات قارئین کی دلچسپی کو مدنظر رکھتے ہوئے پیش کیا جارہا ہے ، اس بارے میں اپنے معالج سے ضرور مشورہ لیجئے)


مانع حمل کے پانچ طریقے اور دیگر مفید معلومات


The post کیا آپ جانتے ہیں کہ حاملہ خواتین کو زیادہ چاکلیٹ کی کیوں ضرورت ہوتی ہے؟ appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
پریگننسی کے دوران ماں کو ڈپریشن کی شکایت ہوسکتی ہے: تحقیق https://htv.com.pk/ur/pregnancy/depression-during-pregnancy Mon, 02 Sep 2019 05:51:14 +0000 https://htv.com.pk/ur/?p=34132 Depression-pregnancy

دوران حمل خواتین متعدد جسمانی و جذباتی تبدیلیوں سے گزرتی ہیں۔ ایک تحقیق کے مطابق اس دوران جسمانی تبدیلیوں کی جانب ان کا منفی رویہ بچے کی پیدائش کے بعد ڈپریشن کا باعث بن سکتا ہے۔ سائیکولوجیکل اسسمنٹ جنرل میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق جسمانی تبدیلیوں کے حوالے سے حاملہ خواتین کے احساسات […]

The post پریگننسی کے دوران ماں کو ڈپریشن کی شکایت ہوسکتی ہے: تحقیق appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>
Depression-pregnancy

دوران حمل خواتین متعدد جسمانی و جذباتی تبدیلیوں سے گزرتی ہیں۔ ایک تحقیق کے مطابق اس دوران جسمانی تبدیلیوں کی جانب ان کا منفی رویہ بچے کی پیدائش کے بعد ڈپریشن کا باعث بن سکتا ہے۔

سائیکولوجیکل اسسمنٹ جنرل میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق جسمانی تبدیلیوں کے حوالے سے حاملہ خواتین کے احساسات سے یہ اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ ان کے شکم میں موجود بچے کے ساتھ تعلق کس حد تک بہتر ہوسکتا ہے اور بچے کی پیدائش کے بعد جذباتی صحت کیسی ہوسکتی ہے۔

انگلینڈ کی یونیورسٹی آف یارک سے منسلک جسمانی ساخت کی ماہر نفسیات کا کہنا ہے کہ، ’خواتین بچے کی پیدائش کے دوران اور اس کے بعد بھی اپنی ظاہری جسمانی ساخت کو لے کر مسلسل دباؤ کا شکار رہتی ہیں۔‘

اسی لیے اس بات کو یاد رکھنا ضروری ہے کہ حمل کے دوران صرف ماں اور بچے کی جسمانی صحت کا ہی خیال نہ رکھا جائے بلکہ خواتین کی جذباتی صحت کا بھی خاص خیال رکھا جائے، جذباتی صحت ہی ہمیں یہ اہم معلومات فراہم کرسکتی ہے کہ بطور ایک ماں عورت طویل مدتی تناظر میں کس طرح کا ردِ عمل کا اظہار کرسکتی ہے۔


حمل ٹھہرنے کی علامات یہ ہیں


تحقیق کے نتائج یہ ظاہر کرتے ہیں کہ حمل کے دوران جن خواتین نے اپنی جسمانی تبدیلیوں کے بارے میں مثبت انداز میں محسوس کیا، ان کے اپنے جیون ساتھی کے تعلقات بڑی حد تک بہتر پائے گئے، ان میں ڈپریشن اور اینزائٹی کی شرح کافی حد تک کم پائی گئی۔

جبکہ وہ اندرونی یا بیرونی جسمانی حالات میں کسی قسم کی تبدیلی پر جسمانی طور پر ملنے والے اشاروں کو سمجھنے میں کافی بہتر رہیں۔ اس کے علاوہ ان کا اپنے شکم میں موجود بچے کے ساتھ زیادہ مثبت تعلق بھی پایا گیا۔

دوسری طرف وہ خواتین جو حمل کے دوران اپنی ظاہری جسمانی ساخت کو لے کر منفی احساسات رکھتی تھیں، انہیں حمل کے دوران اضافی جذباتی سہارے کی ضرورت لاحق ہوئی اور اس کے ساتھ ساتھ بچے کی پیدائش کے بعد پوسٹ نیٹل ڈپریشن (یہ ایک قسم کا ڈپریشن ہے جس کا سامنا والدین کو بچے کی پیدائش کے بعد ہوتا ہے) کی علامات کے لیے مانیٹرینگ مطلوب ہوتی ہے۔

ماہر نفسیات کا کہنا ہے کہ، ’بڑی حد تک یہ پایا گیا ہے کہ حمل کے دوران خواتین کا اپنی جسمانی تبدیلی کا تجربہ ماں اور بچے کی صحت پر مثبت یا منفی اثرات مرتب کرسکتا ہے. لہٰذا خواتین کو زیادہ منفی اثرات سے محفوظ رکھنے کے لیے ہمارے نظام صحت میں اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔‘


مانع حمل گولیاں اپنے اندر مضر اثرات بھی رکھتی ہیں


The post پریگننسی کے دوران ماں کو ڈپریشن کی شکایت ہوسکتی ہے: تحقیق appeared first on ایچ ٹی وی اردو.

]]>